Thursday, October 05, 2006

زندگی اتّفاق ہے

چونکہ میں افطار کی غرض سے کب کا فرار ہوچکا تھا اسلئے دوسرے روز صبح میں نے نمبر دیکھا تو یہ پہچاننے میں وقت نہیں لگا کہ یہ ٹیلی فون نمبر میرے وطن کا ہی ہے۔ اپنے آبائی وطن میں ہمیں جو صورت سے نہ پہچانے وہ نام ضرور جانتا ہے۔ میں نے واپس فون کرکے اپنا تعارف کرایا اور بتایا کہ مجھے کل اپنی غیر حاضری میں آپکے نمبر سے فون آیا تھا لیکن میں بظاہر آپ کو نہیں جانتا۔ انہوں نے جواباً اپنی تعریف بیان کی تو وہ نمبر ہمارے ان دوست کا نکلا، جنہیں میرے توسّط سے میری ہی شراکہ میں اسی ہفتہ ملازمت ملی ہے۔ گشتی فون کی کثرت کی بدولت میں ان کے گھر کا نمبر نہیں جانتا تھا۔

کمپنی میں میرا ٹیلی فون نمبر ہے 7112 اور ان دوست کا 7129۔ باہر سے براہِ راست گفتگو کرنے کیلئے اِس نمبر سے پیشتر چند ہندسے جوڑنے ہوتے ہیں۔ لہٰذا کسی انسان کا دخل نہیں ہوتا۔ ہوا یوں کہ جب انہوں نے اپنے والد کو اپنا نمبر دیا تو انکے والد نے غلطی سے 7129 کی بجائے 71129 لکھ لیا۔ اور جب ان کے والد نے بات کرنی چاہی تو نمبر میرے یہاں کا لگ گیا۔

غلطی ایسے ہندسے کی ہونا کہ وہ نمبر غلط ہونے کے باوجود کارآمد رہے اور ایسے شخص کو فون لگنا جو اس نمبر کو قدرے پہچانے اور تصدیق کرکے پیغام صحیح شخص تک پہنچائے، یہ اتّفاق اچّھا لگا۔

3 Comments:

At 3:34 PM , Blogger indscribe said...

Shukr hai aapne phir se blogging shuroo kar di varna baRii viiraanii ka ehsaas ho rahaa thaa...

 
At 5:54 AM , Blogger urdudaaN said...

عزیز عدنان بھائی
آپ کی اپنائیت دل کو لگی۔
زہے نصیب کہ میری غیر حاضری کا آپ کو احساس ہوا۔

 
At 8:12 PM , Anonymous Anonymous said...

Laa jawab. bas ab is sher ke bat to kuch kehne ke alfaz hi nahin. Maa Sha Allah

 

Post a Comment

Subscribe to Post Comments [Atom]

<< Home